”میں اپنے دو بچوں کو چھوڑ کر داعش کے اس خوفناک مشن پر جارہی تھی“ امریکی ماں نے عدالت میں ایسا انکشاف کردیا کہ کسی کا بھی دل دہل جائے
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
terrible mission isis

امریکہ سے تعلق رکھنے والی ایک جواں سالہ خاتون داعش کے ایک جنگجو کے عشق میں ایسی پاگل ہوئی کہ اپنی دو کمسن بیٹیوں کو بے سہارا چھوڑ کر خود کش مشن پر نکل کھڑی ہوئی۔

فلاڈیلفیا سے تعلق رکھنے والی 32 کیونا تھامس کے بارے میں عدالت کو بتایا گیا کہ اگر اسے عین آخری وقت پر گرفتار نہ کرلیا جاتا تو وہ معصوم بچیوں کو چھوڑ کر شام پہنچ چکی ہوتی۔ امریکہ کی وفاقی عدالت میں 32 سالہ کیونا نے اعتراف کیا کہ وہ دہشت گردوں کی حمایت اور انہیں اخلاقی و مادی مدد فراہم کرنے کی مرتکب ہوئی۔ کیونا کے وکلاءاب تک اس پر لگائے گئے الزامات کو غلط ثابت کرنے کے لئے کوشاں رہے لیکن پیر کے روز اس نے عدالت میں خود پر لگائے گئے تمام الزامات کو قبول کرلیا۔ کئی ماہ پر محیط عدالتی کارروائی کے دوران کیونا کی حالات زندگی اور دہشتگردی کی حمایت سے متعلق کئی انکشافات سامنے آئے، مگر تاحال یہ واضح نہیں کہ اس نے اپنی 7 اور 9 سالہ بیٹیوں کو چھوڑ کر داعش میں شامل ہونے اور خودکش حملہ آوور بننے کا فیصلہ کیوں کیا۔ تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ وہ 2013ءسے ہی انٹرنیٹ پر دہشت گردی سے متعلقہ پراپیگنڈا کا حصہ تھی لیکن جب داعش کے جنگجو ابو خالد الامریکی سے اس کی ملاقات ہوئی تو اس نے شام جانے کا منصوبہ بنالیا۔ رپورٹ کے مطابق دونوں شادی بھی کرچکے تھے۔عدالت کو بتایا گیا کہ جب فروری 2015ءمیں ابوخالد الامریکی نے کیونا سے پوچھا کہ وہ خود کش حملوں میں شامل ہونا چاہے گی تو اس کا جواب تھا ”یہ بہت ہی شاندار کام ہوگا، ایک لڑکی تو اس کا خواب ہی دیکھ سکتی ہے۔“ وہ سپین کے لئے پرواز کی بکنگ بھی کرواچکی تھی جہاں سے شام جانا چاہتی تھی۔ رپورٹ کے مطابق ابوخالد الامریکی شام میں ہلاک ہوچکا ہے، جبکہ کیونا کو اس کے جرائم کی پاداش میں 15 سال قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں