امریکہ کو پاکستان سے معافی منگوائی ، نشان پاکستان اور اسلام آباد میں پلاٹ دیا جائے: زاہد غنی کی سپریم کورٹ میں درخواست
pakistani america supreme court

امریکہ کو پاکستان سے معافی منگوائی ، نشان پاکستان اور اسلام آباد میں پلاٹ دیا جائے: زاہد غنی کی سپریم کورٹ میں درخواست

ملک و قوم کی خدمت کے اعتراف میں صدارتی تمغہ ’نشان پاکستان‘ اور اسلام آباد میں پلاٹ کی الاٹمنٹ کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے جس میں وزیراعظم پاکستان کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار میاں زاہد غنی نے سپریم کورٹ میں دائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ پاکستان کے 1973ءکے آئین کے تحت جو شہری کوئی اچھا کام کرے گا اس کو انعام دیا جائے گا، میں بطور صحافی ملکی مفاد کے لئے بے شمار کام کئے ہیں جن میں دنیا کی سپر پاور امریکہ کو پاکستان سے معافی منگوانے سمیت پاکستانی شہریوں کے امریکہ میں مسائل حل کرنا شامل ہیں۔

درخواست گزار نے بتایاکہ پاکستانی نژاد امریکی شہری ایمل کانسی نے امریکہ میں 25 جنوری 1993ءکو دو سی آئی اے افسران کو قتل اور دو کو زخمی کیا اور پاکستان بھاگ گیا، ایمل کانسی کو امریکی انٹیلی جنس نے پاکستان سے گرفتار کیا۔ ایمل کانسی پر امریکہ کی حکومت کی جانب 25 لاکھ ڈالر کا انعام کیا گیا تھا۔ ایمل کانسی کی گرفتاری کے بعد مقدمہ کے پراسیکیوٹر نے انعام کی رقم دینے کی مخالفت کرتے ہوئے بیان دیا اور پاکستانی قوم کی تضحیک کی جس سے ملک بھر میں احتجاج شروع ہوئے اور پاک امریکہ تعلقات میں ڈیڈ لاک پیدا ہوگیا اور وزیراعظم نواز شریف نے مطالبہ کیا کہ ا مریکہ کا سرکاری وکیل پاکستانی قوم سے معافی مانگے لیکن وکیل رابرٹ ہوران اپنے موقف پر قائم رہے اور فارتی سطح پر معافی کی کوششوں کے باوجود اس نے معافی نہیں مانگی جس پر میں نے اپنا کردارادا کیا اور اس نے میرے کہنے پر معافی مانگی، وزیراعظم کو معافی نامہ تحریری طور پر لکھا جس میں میرے کردار کا ذکر بھی کیا گیا ۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں