داعش کی افغانستان میں موجودگی، وہی ہوا جس کا ڈر تھا، انتہائی تشویشناک خبر آ گئی
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
news daish afghanistan

عراق اور شام کے وسیع علاقوں پر غلبہ پانے کے بعد شدت پسند تنظیم داعش نے افغانستان کا رخ کر لیا ہے اور اقوام متحدہ کی ایک رپورٹ کے مطابق اب اس ملک کے 34 میں سے 25 صوبوں میں داعش کے ہمدرد پائے جاتے ہیں۔
نیوز سائٹ العربیہ کے مطابق جمعہ کے روز جاری کی جانے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جنگجو طالبان میں سے تقریباً 10 فیصد داعش کے حمایتی بن چکے اور اور اس حمایت میں وقت گزرنے کا ساتھ اضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے۔ داعش کے حامی گروپ اکثر علاقوں میں سرکاری افواج پر حملے کر رہے ہیں جبکہ ننگر ہار صوبے میں منشیات کے دھندے پر کنٹرول کے لئے ان کی لڑائی طالبان کے ساتھ بھی ہو رہی ہے۔
رپورٹ میں یہ انکشاف بھی کیا گیا ہے کہ طالبان کے سابق امیر ملا امیر کے سابق مشیر عبد الرﺅف خادم اب افغانستان میں داعش کے سرکردہ رہنما بن چکے ہیں۔ وہ 2014 میں عراق گئے اور اب افغانستان میں اپنا علیحدٰہ گروپ قائم کر چکے ہیں اور ہلمند اور فرح صوبے میں متحرک ہیں۔ عبد الرﺅف خادم کے متعلق بتایا گیا ہے کہ وہ بھاری رقوم ادا کر کے لوگوں کو داعش میں بھرتی کر رہے ہیں اور افغانستان میں داعش کا اثر و رسوخ تیزی سے بڑھا رہے ہیں۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں