امریکہ کی چھتر چھایا میں داعش نے افغانستان میں پنجے گاڑے: حامد کرزئی
hamid karzai afghanistan america

سابق افغان صدر حامد کرزئی ایک بار پھر امریکہ پر برس پڑے، الزام عائد کردیا کہ امریکہ ان کے ملک میں داعش کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے۔

انٹرویو میں حامد کرزئی نے الزام عائد کیا کہ امریکہ نے افغانستان میں قدم جمانے میں داعش کی بھرپور طریقے سے مدد کی۔ ’میں سمجھتا ہوں کہ داعش کو امریکہ نے اپنی نگرانی میں قدم جمانے کی اجازت دی، داعش کو افغانستان میں پنجے گاڑنے کیلئے بھرپور طریقے سے فوجی، سیاسی اور انٹیلی جنس مدد فراہم کی گئی‘۔انہو ں نے کہا کہ امریکہ نے خود ہی داعش کو افغانستان میں پھیلایا جس کے بعد ٹرمپ انتظامیہ نے مدر آف آل بم چلایا لیکن اس کے ایک روز بعد داعش نے اگلے ضلع پر قبضہ کرلیا۔ اس کارروائی سے یہ بات بڑی واضح ہوجاتی ہے کہ افغانستان میں داعش کے سر پر امریکہ کا ہاتھ ہے۔ واضح رہے کہ کچھ عرصہ پہلے امریکہ نے پاک افغان سرحد پر واقع آچن ضلع میں جی بی یو 43 مدر آف آل بم نامی دنیا کا سب سے بڑا نان نیوکلیئر بم پھوڑا تھا جس کے نتیجے میں 36 افراد زندگی کی بازی ہارے تھے۔ اس موقع پر بھی حامد کرزئی نے امریکہ کے اس اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ امریکہ نے نئے اور خطرناک ہتھیاروں کے تجربات کرنے کیلئے افغانستان کو تجربہ گاہ بنالیا ہے جو غیر انسانی اور انتہائی ظالمانہ اقدام ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں