'پاکستان میں کارروائی کی باتیں بیہودہ ہیں'
disgraceful act news attack pakistan

اسلام آباد : ہندوستانی فوج کے سابق جنرل اشوک مہتا نے اپنی حکومت کے پاکستان مخالف دھمکی آمیز بیانات کو بے ہودہ قرار دے دیا۔

ڈان نیوز کے پروگرام نیوز آئی میں گفتگو کرتے ہوئے جنرل (ر) اشوک مہتا کا کہنا تھا ’جو کچھ ہورہا ہے میں اس سے سہمت نہیں ہوں، میں لفظوں کی جنگ میں شریک نہیں ہونا چاہتا‘۔

انہوں نے کہا ’جیسا فوجی آپریشن میانمار میں کیا گیا پاکستان میں ایسی کارروائی کی دھمکیاں دینا کافی بیہودہ ہے، میں اس کے ساتھ نہیں ہوں، اس کو ٹھیک نہیں سمجھتا‘۔

ان کے بقول دیگر ممالک ترقی کررہے ہیں جب کہ ہندوستان اور پاکستان آپس کے جھگڑوں میں الجھے ہوئے ہیں، ہم اپنا وقت برباد کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ’میں اپنے کالمز میں دونوں ممالک کے درمیان بات چیت پر زور دیتا رہا ہوں لیکن یہاں مذاکرات کے بجائے جنگ کی بات کرنے والوں کی زیادہ سنی جاتی ہے۔'

سابق انڈین جنرل کا کہنا تھا 'ہمارے ٹی وی چینلز کو کبھی کبھی نشہ چڑھ جاتا ہے، پاکستانی اور ہندوستانی قیادت کو ایک دوسرے کو للکارنے کی ضرورت نہیں۔'

پاکستان اور انڈیا کے درمیان جنگوں کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ ہندوستانی وزیراعظم نریندر مودی کی پالیسیوں کے بالکل خلاف ہیں، جنگ کی باتیں کرنے والوں کو نہیں معلوم جنگ کیا ہوتی ہے،انہیں اس کے نقصانات کا اندازہ نہیں۔

جنرل (ر) اشوک مہتانے کہا دو ملک ایسے بات نہیں کرتے جیسے پاکستان اور ہندوستان کرتے ہیں، جتنا جلد ہوسکے دونوں ممالک کو مذکرات شروع کرنے چاہیئں۔

جنرل مہتانے مزید کہا کہ پاکستان نے بہت دکھ اور دہشتگردی دیکھی ہے، ترقی کرنا اور معاشی طور پر مضبوط ہونا پاکستان کا حق ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں