سائنس فکشن خیالات اب حقیقت بننے کے قریب
sciencefiction flying air taxi dreams

اڑنے والی ٹیکسی کی آزمائش رواں سال متوقع

ویسے تو کراچی یا دیگر بڑے شہروں میں گھر سے دفتر کا راستہ کسی آزمائش سے کم نہیں ہوتا خاص طور پر جب ٹریفک جگہ جگہ جام ہو، مگر تصور کریں ایسی پبلک ٹرانسپورٹ کا، جو آپ کو گھر سے پک کریں اور اڑ کر دفتر پہنچا دے، اچھا ہے نا؟ اور اس سائنس فکشن خیال کو معروف طیارہ ساز کمپنی ائیر بس حقیقت کا روپ دینے والی ہے جس نے خودکار پرواز کی صلاحیت رکھنے والی ٹیکسیوں کی آزمائش رواں سال کے آخر میں کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وہانا نامی اس انوکھی سروس کا اعلان رواں سال کے شروع میں ائیربس کے سی ای او ٹام اینڈرز نے کرتے ہوئے بتایا تھا کہ یہ پرواز کرنے والی ٹیکسیاں ایک مسافر کو منزل تک پہنچانے کا کام کریں گی۔ کمپنی کے مطابق وہ برقی اور خودکار پرواز کی صلاحیت رکھنے والی ان گاڑیوں کا بیڑہ تیار کرنا چاہتی ہے جو گنجان آباد علاقوں میں ایک چھت سے دوسری چھت پر مسافروں کو چھوڑ سکیں گیں۔ کمپنی کے مطابق اس کے عملی نمونے کی تیاری پر کام جاری ہے اور رواں برس کے آخر تک اس کی پرواز کا ہدف رکھا گیا ہے اور 2020 تک اسے کمرشل بنیادوں پر تیار کیا جانے لگے گا۔ ائیربس نے اسے شہروں کے لیے مستقبل کی سواری قرار دیا ہے۔ اس منصوبے کو یہ کمپنی بہت سنجیدہ لے رہی ہے اور اس کے خیال میں یہ شہروں کی بہت زیادہ ٹریفک کے مسئلے کا سامنا نہیں ہوگا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں