نیب لاہور کے دفتر پر دھاوا بول کر ریکارڈ نذر آتش کرنے کا منصوبہ ناکام بنادیا گیا
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
nab attacked office

نیب کے لاہور آفس پر حملہ کرنے کا ایک منصوبہ ناکام بنادیا گیا ہے۔

اس منصوبے کی تمام تیاریاں مکمل ہوچکی تھیں کہ نیب کو اس کی اطلاع مل گئی لہٰذا اس نے فوری طور پر حفاظت کے لئے رینجرز کو طلب کرلیا۔ رینجرز کی آمد پر حملہ کی تیاریاں دھری کی دھری رہ گئیں۔یہ تیاریاں لاہور سے تعلق رکھنے والے ایک رکن قومی اسمبلی اور ایک رکن پنجاب اسمبلی نے تیار کی ہے۔ سازش کا مقصد نیب کے دفتر میں آگ لگا کر اس کے ریکارڈ کو ختم کرنا تھا۔ ایک اطلاع کے مطابق نیب کی حراست میں موجود سابق ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے احد چیمہ کو رہا کرانے کا منصوبہ بھی تھا۔مذکورہ دونوں ارکان اسمبلی نے اس مقصد کے لئے اپنے حلقے سے پانچ چھ ہزار افراد اکٹھے کرنے کا بندوست کرلیا تھا۔ دفتر کو ریکارڈ سمیت نذر آتش کرنے کے لئے پٹرول کے ڈبے بھرلئے گئے تھے اور انہیں گاڑیوں میں بھی رکھ لیا گیا تھا۔پروگرام کے مطابق ان افرا دکو ایک جلسہ کے نام پر اکٹھا کیا جانا تھا جہاں سے انہیں پٹرول سمیت نیب کے دفتر روانہ کردیا جاتا۔ یہ لوگ جلوس کی شکل میں جاتے اور اچانک حملہ کرکے آگ لگادی جاتی۔ یہ لوگ ایسی صورتحال پیدا کرتے کہ ریکارڈ کے جلنے تک آگ بجھانے کی کوئی کوشش کامیاب نہ ہوپاتی۔ اس دوران وہاں قید احد چیمہ کو بھی رہا کرالیا جاتا لیکن نیب حکام کو کس طرح اس کی اطلاع مل گئی۔ انہوں نے فوری طور پر متعلقہ اتھارٹیز سے رابطہ کیا اور دفتر کی حفاظت کے لئے رینجرز بھیجنے کی درخواست کی۔ اس صورتحال کے پیش نظر رینجرز کو روانہ کردیا گیا جنہوں نے دفتر کی سکیورٹی سنبھال لی۔ جس کا منصوبہ سازوں کو بھی علم ہوگیا اور وہ اس پر عمل نہ کرسکے۔بتایا گیا ہے کہ ان اطلاعات کے بعد ملک بھر میں نیب کے دوسرے دفاتر کی سکیورٹی کے انتظامات کو مزید سخت کردیا گیا ہے تاکہ کسی جگہ بھی کوئی شرپسندی نہ ہوسکے۔واضح رہے کہ ان دنوں نیب کا لاہور آفس بہت اہمیت اختیارکرگیا ہے کیونکہ کرپشن کے زیادہ تر ہائی پروفائل کیسز کا ریکارڈ اسی دفتر کے پاس ہے اور اس قسم کا ریکارڈ پاکستان میں کسی اور دفتر کے پاس نہیں۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں