نعیم الحق اور خرم نواز گنڈا پور سپریم کورٹ کے باہر لڑ پڑے
khurram nawaz gundapur conflict naeem ul haq

اکستان تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق اور پاکستان عوامی تحریک کے رہنما خرم نواز گنڈا پور آپس میں لڑ پڑے اور اس دوران دونوں میں گالم گلوچ بھی ہوئی۔

 پاناما لیکس کیس کی سماعت ملتوی ہونے کے بعد پاکستان عوامی تحریک کے خرم نواز گنڈا پور شیخ رشید کے ہمراہ جیسے ہی سپریم کورٹ کے باہر میڈیا کے لیے بنائے گئے ڈائس پر پہنچے تو پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق نے انہیں بات کرنے سے روک دیا۔ نعیم الحق کا کہنا تھا کہ پہلے ان کی پارٹی کے چیرمین عمران خان بات کریں گے، خرم نواز گنڈا پور کی جانب سے اصرار کیا گیا تو نعیم الحق نے انہیں ڈائس سے ہی ہٹا دیا۔ اس دوران دونوں میں تلخ کلامی ہوگئی اور بات گالم گلوچ تک جاپہنچی، میڈیا کے مائیک موجود ہونے کے باعث شیخ رشید احمد اور دیگر افراد نے دونوں کے منہ پر ہاتھ رکھ کر معاملے کو مزید بگڑنے سے بچایا۔ معاملہ رفع دفع ہونے کے بعد خرم نواز گنڈا پور نے پی ٹی آئی رہنما علیم خان سے نعیم الحق کی شکایت کرتے ہوئے کہا کہ اگر یہ رویہ رہا تو میں برداشت نہیں کروں گا، میں صرف اپنا موقف پیش کرنے گیا تھا لیکن مجھے گندی گالیاں دی گئیں، بدتمیزی کی گئی اور دھکے دیے گئے۔ واقعے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ میں شیخ رشید سے بات کررہا تھا جس پر نعیم الحق نے بدتمیزی کی اور کہا کہ پہلے عمران خان بات کریں گے۔ نعیم الحق غنڈا ہے، اس جیسا شخص گالیاں دے، میں برداشت نہیں کروں گا  کیونکہ پاکستان عوامی تحریک کا یہ وطیرہ نہیں، پی ٹی آئی والوں پر واضح کردیا ہے کہ ایسا رویہ برداشت نہیں کروں گا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں