عمران خان نااہلی کیس کے بعد جہانگیر ترین کے کیس کا بھی فیصلہ محفوظ
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
jehangir tareen imran khan

سپریم کورٹ نے جہانگیر ترین نااہلی کیس کا فیصلہ محفوظ کر لیا،تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی ،دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے جہانگیر ترین کے وکیل سے استفسار کیا کہ لندن ہائیڈ ہاو¿س کامالک کون ہے؟،اورہائیڈ ہاو¿س کی رجسٹری کس کے نام ہے؟۔
وکیل سکندر بشیر نے عدالت کو بتایا کہ شائنی ویوکمپنی ہائیڈ ہاؤس کی مالک ہے اورلینڈرجسٹری شائنی ویوکے نام پرہے،10 مئی کو جائیداد شائنی ویوکمپنی نے خریدی۔اس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ جائیدادخریدنے کی ہدایت کس نے دی؟،کیاٹرسٹ کوپیسے جہانگیرترین نے دیئے تھے؟جہانگیر ترین کے وکیل نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ٹرسٹ کو پیسے جہانگیرترین نے دیئے لیکن میرے موکل نے قانونی آمدن سے رقم بھیجی،میرے موقف کےخلاف کوئی موادنہیں ہے۔دوران سماعت جسٹس فیصل عرب نے کہا کہ تمام منی ٹریل جہانگیرترین نے بتائی ہے،ٹرسٹ میں جہانگیرترین تاحیات بینی فشری ہیں۔چیف جسٹس کا کہناتھا کہ جہانگیرترین نے براہ راست رقم آف شورکمپنی کوبھیجی،یہ رقم ٹرسٹ کونہیں بھیجی۔وکیل صفائی سکندر بشیر نے کہا کہ ٹرسٹ خودایک قانونی ادارہ ہے۔اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ پہلے تحریری جواب اورٹرسٹ ڈیڈمیں تضاد ہے،جہانگیر ترین صوابدیدی نہیں،تاحیات بینی فشری ہیں۔جہانگیر ترین کے وکیل نے کہا کہ عدالت صوابدیدی کے لفظ کو نظرانداز نہ کرے،ٹرسٹی جہانگیرترین کاتاحیات ہوناختم کرسکتا ہے۔جسٹس عمر عطابندیال نے استفسار کیا کہ کیاجہانگیرترین کاٹرسٹ پرکنٹرول نہیں؟جہانگیرترین کے موقف میں تضادہے،کاغذات نامزدگی میں کسی کوبینی فشل نہیں بنایاگیا،بینی فشری ہیں ،اسے بھی گوشواروں میں ظاہرکرناچاہئے تھا۔اس پر درخواست گزار کے وکیل عاضد نفیس نے کہا کہ جہانگیرترین کے بچے ابھی بینی فشل بنے ہی نہیں۔عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کر لیا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں