میڈیا ہائی پروفائل مقدمات پر قیاس آرائیاں نہ کرے، آئی جی
high profile cases speculate disclosed news media

صحافیوں کوہائی پرفائل کیسزسے متعلق کارکردگی کے بارے میں بتایا جائیگا، اے ڈی خواجہ۔

ولیس بلاکسی امتیاز و تفریق جرائم پیشہ عناصر کے خلاف مصروف عمل ہے اور اس تسلسل میں تمام تر اقدامات کا مقصد صرف اور صرف قیام امن کے حالات پر کنٹرول اور لوگوں کی جان ومال، عزت وآبرو کے تحفظ کو یقینی بنانا ہے۔  آئی جی سندھ اللہ ڈنو خواجہ کی جانب سے جاری اعلامیے میں صحافیوں سے کہا ہے کہ پولیس بلاکسی امتیازو تفریق جرائم پیشہ عناصر کے خلاف مصروف عمل ہے اور اس تسلسل میں تمام تر اقدامات کا مقصد صرف اور صرف قیام امن کے حالات پر کنٹرول اور لوگوں کی جان ومال عزت وآبرو کے تحفظ کو یقینی بنانا ہے آئی جی سندھ نے کہا کہ میڈیا جرائم پیشہ عناصر، دہشت گردوں اور باالخصوص ایسی وارداتوں سے متعلق درج ہائی پروفائل کیسز کے حوالے سے قیاس آرائیاں نہ کرے کیونکہ اس عمل سے ایک جانب تو تفتیش میں ہونیوالی پیش رفت متاثر ہوتی ہے تو دوسری جانب انہی قیاس آرائیوں کا براہ راست فائدہ ملزمان اور انکے سرپرست اٹھاتے ہیں۔ آئی جی نے کہا کہ پولیس نے ہمیشہ اپنی کارکردگی جرائم کے خلاف جاری آپریشنز، حکمت عملی ولائحہ عمل جیسے اقدامات کوہرسطح پر الیکٹرانک و پرنٹ میڈیا کے ساتھ شیئر کیا ہے پولیس جانتی ہے کہ میڈیا سے بہتر عوام کی رہنمائی اور آگاہی کوئی دوسرا ادارہ نہیں کرسکتا، لہٰذا میں صحافیوں کو یہ یقین دلاتا ہوں کہ باالخصوص ہائی پرفائل کیسز سے متعلق پولیس کی کارکردگی کو آپ کے ساتھ ضرور شیئر کیا جائے گا اور آپ کے سوالات کے جوابات بھی دیے جائیں گے مگر آپ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ہائی پروفائل کیسز سے متعلق کسی بھی حوالے سے قیاس آرائی نہیں کی جائے گی کیونکہ یہ کسی بھی لحاظ سے اس ملک صوبے اور اسکے عوام کے مفاد میں نہیں ہے ان قیاس آرائیوں کا براہ راست فائدہ صرف اور صرف مجرموں کو پہنچتا ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں