ماحولیاتی آلودگی وپانی فراہمی کیس،چیف جسٹس ثاقب نثار نے سابق جج امیر ہانی مسلم کو واٹر کمیشن کا سربراہ مقرر کردیا
chief justice saqib nisar environmental pollution action

چیف جسٹس ثاقب نثار نے ماحولیاتی آلودگی اور پانی فراہمی کیس میں سپریم کورٹ کے سابق جج امیرہانی مسلم کو واٹر کمیشن کا سربراہ مقررکردیا اور انہیں سپریم کورٹ کے جج کے اختیارات تفویض کر دیے ۔
دوران سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے ایڈووکیٹ جنرل سندھ سے استفسار کیا کہ وہ  جسٹس(ر)امیر ہانی مسلم کا سن کر مایوس کیوں ہو گئے؟۔بھرپور کارروائی کیلئے ہانی صاحب کو مکمل اختیار دیں گے ،ہم غیر معمولی کام کر رہے ہیں رات 12 بجے تک بھی عدالت لگائیں گے ۔ چیف جسٹس نے کہا کہ بچپن میں جب شرارت کرتے تھے تو نانی کہتی تھی کہ بھبھوا آجائے گا، جسٹس ثاقب نثار کی اس بات پر عدالت میں قہقہے گونج اٹھے۔ چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا کہ میرے ججز رات کو بھی بیٹھ سکتے ہیں،یہ لوگ مجھے اچھا کھانا بھی کھلاتے ہیں،انہوں نے کہا کہ پانی کے منصوبوں میں بجلی کا تعطل نہیں ہونا چاہئے،چیف سیکرٹری صاحب !ہم آپ کی مدد کیلئے آئے ہیں،اگرآپ کو فنڈ نہیں ملتا تو سوچ کر آیا ہوں اپنی تین ماہ کی تنخواہ دوں گا،چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ہم کام نہیں رکنے دیں گے لوگوں کا مسئلہ حل کریں گے ،آپ کو دوسروں سے بھی چندہ کر لیں گے ،ان کا کہناتھا کہ سمجھوںگا سندھ حکومت رقم دینے کے قابل نہیں تو یہ بھی کر لیں گے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں