سپریم کورٹ کا مردم شماری پر وفاق سے دو ٹوک جواب طلب
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
census supreme court

سپریم کورٹ نے مردم شماری سےمتعلق وفاق سے دو ٹوک جواب طلب کرلیا ہے ، مردم شماری سے متعلق از خود نوٹس کیس میں سپریم کورٹ نے حکم دیا ہےکہ فیڈریشن2 ہفتے میں تحریری بتائے کب مردم شماری کرائے گی۔

چیف جسٹس نے دوران سماعت پوچھا کہ مردم شماری حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے کیوں پورا نہیں کرنا چاہتی ؟ اس پر اٹارنی جنرل نے جواب دیا کہ اپریل 2017ء میں مردم شماری ہوجائے گی ۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ کب مردم شماری ہو گی حکومت نے کوئی مثبت جواب نہیں دیا ، آرمی کے ذریعے مردم شماری کرانا کوئی آئینی یا قانونی ضرورت نہیں ،مردم شماری نہ کرانے سے عوام اور جمہوری عمل کو فرق پڑ رہا ہے۔چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں یہ بھی کہا کہ مردم شماری کے بعد قومی و صوبائی اسمبلیوں کی نشستوں کا تعین ہو گا ، حلقہ بندیاں ہوں گی، اگر یہ سب نہ ہوا تو 2018 میں کیسے الیکشن کرائیں گے؟ الیکشن کرانے کے لیے کیا اسٹیٹس کو برقرار رکھیں گے؟چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ یہ حکومت ہی نہیں عدالتوں کی بھی فیس سیونگ کا معاملہ ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں