داعش سربراہ ابو بکر البغدادی زندہ ہیں ، وزارت داخلہ کا دعویٰ
abu bakr al baghdadi live interior ministry leader claim isis

عراقی وزارت داخلہ کے حکام نے دعوی کیا ہے کہ عالمی دہشت گرد تنظیم داعش کے سربراہ ابو بکر البغدادی زندہ ہیں اور ایک فضائی کارروائی میں زخمی ہونے کے بعد وہ شام کے ایک ہسپتال میں زیر علاج ہیں۔

عراق کے سرکاری اخبار اس سباہ نے انٹیلی جنس اور انسداد دہشت گردی ڈپارٹمنٹ کے چیف ابو علی البصری کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ ہمارے پاس دہشت گرد تنظیم کے اندرونی ذرائع سے موصول ہونے والی دستاویزات اور غیر مصدقہ اطلاعات ہیں کہ ابوبکر البغدادی اب بھی زندہ ہیں اور شام کے شمال مشرقی جزیرے میں روپوش ہیں۔خیال رہے کہ شام کے شمال مشرقی صوبے الحسکہ کے صحرا میں موجود داعش سرحد پار عراق میں تقریبا اپنی خلافت کھو چکی ہے۔عراقی انٹیلی جنس چیف کا مزید کہنا تھا کہ ابو بکر البغدادی کو ٹانگ اور جسم کے دیگر حصوں میں فریکچر، زخم اور شوگر کا مرض لاحق ہے، جس کے باعث وہ چل نہیں سکتے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ داعش کے سربراہ عراق میں فضائی کارروائی میں زخمی ہوئے تھے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں