ایک رکشہ ڈرائیور جس نے 300 خواتین کو ایڈز کا مریض بنادیا، دل دہلادینے والی تفصیلات
reason new delhi strange women aids

بھارت میں خواتین کے خلاف جنسی جرائم تو کوئی نئی بات نہیں ہے لیکن ایڈز کے شکار ایک رکشہ ڈرائیور کے جنسی جرائم کی دہشت ناک کہانی نے تو بھارتیوں کو بھی دہلا کر رکھ دیا ہے۔

اخبار ”ٹائمز آف انڈیا“ کے مطابق پولیس نے 31 سالہ رکشہ ڈرائیور کو اپنے ہی دوست کے گھر میں چوری کے الزام میں گرفتار کیا۔ جب اس شخص سے تفتیش کی جارہی تھی تو اس نے بھیانک انکشاف کیا کہ یہ ایڈز کا مریض ہے اور اس نے جان بوجھ کر اپنے مرض کو 300 سے زائد خواتین میں منتقل کیا۔ملزم نے تفتیش کے دوران پولیس کوبتایا کہ وہ کئی سال سے ہی قحبہ خانوں کا گاہک رہا تھا لیکن جب اسے ایڈز کی بیماری ہوئی تو اس نے خصوصی طور پر جسم فروش خواتین کے پاس یہ بیماری منتقل کرنے کے ارادے سے جانا شروع کردیا، جبکہ جسم فروش خواتین کے علاوہ بھی کئی دیگر خواتین کے ساتھ تعلقات استوار کئے اور انہیں بھی ایڈز کی بیماری منتقل کی۔ ملزم کا شکار بننے والی خواتین میں کئی ایسی گھریلو خواتین بھی شامل ہیں کہ جن کے بچوں کو وہ اپنے رکشے پر سکول چھوڑنے جاتا تھا اور ان خواتین سے راہ و رسم بنا چکا تھا۔ ملزم کے بھیانک انکشافات کے بعد پولیس اس کی بتائی گئی متاثرہ خواتین کے بارے میں معلومات جمع کررہی ہے تاکہ انہیں آگاہ کیا جاسکے کہ وہ اس جنسی درندے سے تعلق کے بعد ایڈز کے خطرے سے دوچار ہیں۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں