شادی شدہ جوڑوں میں سب سے زیادہ طلاقیں کس وجہ سے ہوتی ہے؟ ماہرین کا جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
reason marriage divorce

شادی شدہ جوڑوں میں سب سے زیادہ طلاقیں کس وجہ سے ہوتی ہے؟ ماہرین کا جواب آپ کے تمام اندازے غلط ثابت کردے گا

دنیا بھر میں عام تاثر پایا جاتا ہے کہ شادی شدہ جوڑوں میں طلاق کی بڑی وجوہات میں لڑائی جھگڑے ، کسی ایک فریق کا بے وفائی کرنا اور کسی دیگر شخص کے ساتھ تعلقات استوار کر لینا ہے مگر ایک نئی تحقیق میں یہ تاثر غلط ثابت کر دیا گیا ہے۔ یہ تحقیق برطانیہ میں طلاق کے کیس لڑنے والے وکلاء کی ایک ٹیم نے کی ہے۔ وکلاء نے روزمرہ زندگی میں فریقین کے روئیے اور پریشان کن عادات کو طلاق کی سب سے بڑی وجہ قرار دیا ہے جسے عموماً درخورِ اعتنا سمجھا جاتا ہے اور کوئی اس پر توجہ نہیں دیتا۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ طلاق کے کیس کی قانونی دستاویزات میں درج کروائی گئی وجوہات دراصل حقیقت نہیں ہوتی بلکہ میاں بیوی میں آئے روز کی جھنجھلاہٹ طلاق کی وجہ بنتی ہے اور اس جھنجھلاہٹ کی وجہ دوسرے فریق کا رویہ اور عاداتِ بد ہوتی ہیں۔ تحقیقاتی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شادی شدہ جوڑے اپنا رویہ تبدیل کرلیں تو صرف برطانیہ میں سالانہ 13ہزار طلاقوں سے بچا جا سکتا ہے۔اس وقت میاں بیوی میں موجود عاداتِ بد میں سے زیادہ تر کا تعلق انٹرنیٹ سے ہے، وہ آن لائن جواء ہو، فحش فلمیں دیکھا ہو یا پھر آن لائن شاپنگ ہو، یہ عادات دوسرے فریق کو جھنجھلاہٹ میں مبتلا کر دیتی ہیں اور جب اسے ان سے نجات کی اور کوئی راہ سجھائی نہیں دیتی تو وہ طلاق کے راستے پر چل پڑتا ہے۔اس کے علاوہ طلاق کی دیگر بڑی وجوہات میں کسی ایک فریق کا متکبراور مغرور ہونا، اپنا تکبرانہ تخلص رکھ لینا، گھریلو اخراجات کے لیے ملنے والے الاؤنس کو جیب خرچ سمجھ کر اڑا دینا شامل ہیں۔تحقیقاتی ٹیم کی رکن جیانا لیزیکی کا کہنا تھا کہ ’’جب ہم نے طلاق کے سینکڑوں کیسز کے ڈیٹا کا تجزیہ کیا تو بیشتر طلاقوں کی اصل وجوہات جان کر میں کسی حد تک حیران ہوئی۔حیران کن طور پر فریقین میں سے ایک کا جارحاجہ رویہ53فیصد طلاقوں کی وجہ بنا جبکہ کسی ایک فریق کی بے وفائی محض 13فیصد جوڑوں میں علیحدگی کا سبب بنی۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں