اندھیروں کو شکست دینے والا بچہ
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
child news interesting

کڑی کی بنی ایک چھوٹی سی ڈیسک کے پیچھے بیٹا یہ بچہ رات کی تاریکی میں ایک ریسٹورنٹ کی روشنی کی مدد سے اپنے اسکول کا کام کرنے میں مصروف ہے۔

یہ متاثر کن تصویر ڈینئیل کیبریرا نامی ایک فلپائنی بچے کی ہے جو ایک ڈاکٹر یا پولیس اہلکار بننے کا خواب دیکھ رہا ہے اور بے گھر ہونے کے باعث اپنے شہر کی گلیوں میں پڑھنے پر مجبور ہے۔میڈیکل کی طالبہ جوائس ٹوریفرانسکا نے رات گئے اپنے گھر جاتے ہوئے اس پرعزم بچے کو رات کی تاریکی میں میکڈونلڈ کے سامنے پڑھتے ہوئے دیکھا اور اس نے ڈینئیل کی تصویر کھینچ کر سوشل میڈیا پر شیئر کردی۔

فلپائنی میڈیا کے مطابق 9 سالہ ڈینئیل مانداوے شہر کا رہائشی اور تیسری جماعت کا طالبعلم ہے۔اس کے پاس محض ایک ہی پینسل ہے جبکہ اس کی دوسری پینسل بھی اسکول میں کسی طالبعلم نے چرا لی تھی۔رپورٹس کے بقول یہ بچہ اپنی ماں اور چھوٹے بھائی کے ہمراہ ایک چھوٹے مگر دیواروں سے محروم فوڈ اسٹال میں رہ رہا ہے جبکہ اس کے والد کا انتقال اور آبائی گھر نذر آتش ہوچکا ہے۔مگر تمام تر مشکلات کے باوجود یہ بچہ اپنا تعلیمی سلسلہ جاری رکھنے کے لیے پرعزم اور ساتھی طالبعلموں کے ساتھ کھیل کود میں وقت ضائع کرنے کی بجائے اکثر ریسٹورنٹ کی روشنی میں پڑھائی میں مصروف رہتا ہے۔

سوشل میڈیا پر اس بچے کی تصویر نے سینکڑوں افراد کو متاثر کیا ہے اور ان کے دل پگھل کر رہ گئے ہیں یہی وجہ ہے کہ وہ ڈینئیل کی مدد کرکے اس کے خواب کو تعبیر دینا چاہتے ہیں۔اس بچے کی مدد کے لیے سوشل میڈیا پر ایک پیج بھی تیار کیا گیا ہے اور اب تک وہاں فلپائی کرنسی میں 22 ہزار روپے سے زیادہ جمع کیے جاچکے ہیں اور ہدف 50 ہزار رکھا گیا ہے تاکہ اس کا تعلیمی سلسلہ برقرار رہ سکے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں