’موبائل فون کی بیٹری مسافر جہاز کی تباہی کا باعث بنی ‘
air crash reason battery phone

ملائیشیا ائیرلائن کی پرواز MH370 کو لاپتہ ہوئے تقریباً ڈیڑھ سال کا عرصہ گزرچکا ہے اور تاحال اس کا سراغ نہیں مل سکا۔ اس بدقسمت طیارے کی تباہی کے متعلق مسلسل تحقیق جاری رہی ہے اور اب ایک تازہ ترین دعویٰ سامنے آگیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اس جہاز کی تباہی کا سبب اس میں لدے سامان میں موجود موبائل فون کی بیٹریاں تھیں جن کے پھٹنے سے طیارہ حادثے کا شکار ہوگیا۔
ملائیشین حکومت کی ایک رپورٹ کے مطابق 7مارچ کو موبائل فون بیٹریوں کی ایک کھیپ تیار کی گئی اور یہ ایک دن بعد ملائیشین طیارے پر منتقل کی گئی۔ اس رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ موٹرولا کمپنی کی ان بیٹریوں کا کل وزن 500 پاﺅنڈ تھا اور انہی کی وجہ سے ہونے والا دھماکہ 8 مارچ کو طیارے کی تباہی کا سبب بنا، جس میں 239 افراد دنیا سے رخصت ہوئے۔
رپورٹ کے مطابق ان بیٹریوں کو طیارے میں لانے سے قبل ان کی سیفٹی چیکنگ مناسب طور پر نہیں کی گئی تھی اور انہیں خطرناک سامان قرار نہیں دیا گیا تھا۔ لیتھیم آئن بیٹریوں کے ماہر ڈاکٹر وکٹر ایٹل کا کہنا ہے کہ تیاری کے فوری بعد بیٹریوں کو طیارے میں منتقل کرنا ایک خطرناک عمل تھا کیونکہ ان میں موجود آرگینک الیکٹرولائٹ بلند درجہ حرارت پر تحلیل ہوجاتا ہے اور اس سے خارج ہونے والے بخارات اور گیس آگ لگنے اور دھماکے کا سبب بن سکتے ہیں۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں