کیموتھیراپی سے کینسر ختم نہیں ہوتا بلکہ اس کی شدت میں اضافہ ہوجاتا ہے کیونکہ۔۔۔‘ جدید تحقیق میں سائنسدانوں نے سب سے خوفناک انکشاف کردیا،
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
treatment cancer

کیموتھراپی کینسر کے علاج میں پہلا آپشن سمجھی جاتی ہے۔ اس طریقہ علاج سے کینسر کا ٹیومر سکڑکر چھوٹا ہو جاتا ہے اور عام تاثر کے مطابق مریض کی شفایابی کی راہ ہموار ہونے لگتی ہے

لیکن اب نیویارک کے البرٹ آئن سٹائن کالج آف میڈیسن کے سائنسدانوں نے اس کے برعکس ایسا انکشاف کر دیا ہے کہ لوگ اس طریقے سے علاج کروانے سے خوف کھائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں نے بتایا ہے کہ ”کیموتھراپی کینسر کے ٹیومر کو ختم کرنے کی بجائے اسے بڑھا سکتی ہے اور مزید خطرناک بنا سکتی ہے۔ تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر جارج کیراگینیس کا کہنا تھا کہ ”کیموتھراپی سے ٹیومر سکڑ تو جاتا ہے لیکن ساتھ ہی اس کی مزید نشوونما ہونے کے راستے کھل جاتے ہیں۔ اس سے ٹیومر کو کو نظام خون میں پھیلنے کا راستہ مل جاتا ہے اور وہ پہلے سے زیادہ طاقتور اور خطرناک ہو جاتا ہے۔جب ایک بار یہ ٹیومر نظام خون کے ذریعے دیگر اعضاءتک پھیل جائے تو پھر تقریباً لاعلاج ہو جاتا ہے اور مریض کی موت پر منتج ہوتا ہے۔ ہم اس تحقیق کے ذریعے لوگوں کو کیموتھراپی کے ذریعے علاج کروانے سے نہیں روکنا چاہتے۔ ہمارا مقصد یہ ہے کہ کیموتھراپی کے دوران ٹیومر کی حرکت پر نظر رکھنے کا بہترذریعہ دریافت کیا جانا چاہیے۔تاکہ اگر کیموتھراپی کے دوران ٹیومر پھیلنا شروع ہو جائے تو فوری طور پر اسے روک کر سرجری کر دی جائے۔“

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں