کونٹیکٹ لینز استعمال کرنیوالے افرادیہ خبرضرورپڑھ لیں
read lenses use news

کانٹیکٹ لینسز کے استعمال میں احتیاط بینائی کیلئےضروری

بینائی کی کمزوری کی صورت میں یا شوقیہ طور پر آئی لینسز کا استعمال کافی عام ہے مگر اس میں احتیاط نہ کرنے کی صورت میں آنکھوں کے سنگین انفیکشن اور طویل المعیاد نقصان کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ یہ انتباہ امریکا میں ہونے والی ایک تحقیق میں سامنے آیا۔ امریکا کے محکمہ صحت سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریونٹیشن کی جانب سے جاری ایک رپورٹ کے مطابق ہر 5 میں سے ایک شخص کو لینسز کے باعث آنکھوں کے مختلف انفیکشنز کا سامنا ہوتا ہے۔ اس رپورٹ میں 2005 سے 2015 کے دوران 1075 کیسز کا جائزہ لیا گیا جن میں لینسز کے استعمال کے باعث آنکھوں کو نقصان پہنچا تھا جس کے نتیجے میں ان افراد کی بینائی ختم ہوگئی بلکہ کچھ کو قرنیہ کے ٹرانسپلانٹ کا آپریشن بھی کروانا پڑا۔ اسی طرح 10 فیصد مریضوں کو ہنگامی طور پر طبی امداد فراہم کی گئی۔ تحقیق میں بتایا گیا کہ کانٹیکٹ لینسز بینائی کی درستگی کے لیے ایک محفوظ اور موثر طریقہ ہے مگر اس کے لیے کافی احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے۔ تحقیق کے مطابق لینسز کا نامناسب استعمال اور ان کا خیال نہ رکھنا آئی انفیکشن کا باعث بنتا ہے جو طویل المعیاد نقصان کا خطرہ بڑھا دیتا ہے۔ دنیا بھر میں کروڑوں افراد کانٹیکٹ لینسز کا استعمال کرتے ہیں اور محققین نے مشورہ دیا ہے کہ کبھی بھی انہیں پہن کر سونے کی کوشش نہ کریں۔ اسی طرح لینسز کی صفائی کے لیے تازہ سلوشن استعمال کریں اور لینسز کو کچھ عرصے بعد بدل دیا کریں۔ احتیاط سے استعمال کریں لینسز کو چھونے سے قبل اپنے ہاتھوں کو دھوئیں اور خشک کرلیں تاکہ ان پر مٹی یا تیل باقی نہ رہے۔ ہمیشہ اپنے ہاتھوں کو خشک کرنے کے لیے ایسا تولیہ استعمال کریں جو روئیں دار نہ ہو۔ لینس کو لگانے کے لیے ناخنوں یا تیز دھار اشیاء جیسے چمٹی کے بجائے اپنی انگلیوں کے پوروں کا استعمال کریں۔ یہ خیال بھی اچھا ہے کہ اپنی انگلیوں کے ناخنوں کو چھوٹا رکھا جائے تاکہ اپنے لینسز یا آنکھوں کو نقصان سے بچایا جاسکے۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آنکھوں میں لگائے جانے سے قبل آپ کے لینس جس سلوشن میں رکھے ہو وہ ہر طرح کے ذرات سے پاک ہو۔ جب بھی لینس کو آنکھوں سے نکالیں تو انہیں الگ الگ صاف کریں تاکہ ان کی سطح پر چپک جانے والی ہر چیز نکل جائے، اس کے لیے صاف کرنے والے سلوشن کے چند قطرے اپنی ہتھیلی میں ڈالیں اور لینس کو ان میں بھگو کر نرمی سے رگڑیں۔ اس کے بعد انہیں کچھ اور سلوشن سے دھوئیں اور کیس میں محفوظ کردیں۔ ہیئر اسپرے کا استعمال لینس لگانے سے قبل کریں مگر میک اپ اُس وقت کریں جب لینس لگالیں۔ رات کو میک اپ صاف کرنے سے قبل لینسز کو آنکھوں سے نکالیں۔ ہمیشہ ایسے جراثیم کش سلوشن اور انزیماٹیک کلینرز کو استعمال کریں جو آپ کو آنکھوں کا ڈاکٹر تجویز کرے، مختلف اقسام کے لینسز کو مختلف سلوشنز کی ضرورت ہوتی ہے جس کا انحصار ان کی قسم پر ہوتا ہے۔ کبھی بھی اپنے لینس کی صفائی کے لیے نلکے کا پانی یا ڈسٹلڈ/بوتل بند پانی استعمال نہ کریں۔ ہر بار جب بھی لینس کو نکالیں تو کیس میں آنے والی کمی کو مزید سلوشن سے پورا کرنے کے بجائے پرانے سلوشن کو پھینک دیں اور اسے سٹیرائل واٹر سے دھونے کے بعد کیس کو نئے سلوشن سے بھریں۔ کیس کو دھونے کے بعد تولیے یا کپڑے سے سکھانے کی کوشش نہ کریں بلکہ اسے ہوا سے خشک ہونے دیں۔ یہ بھی مشورہ دیا جاتا ہے کہ لینسز کے اسٹوریج کیس کو ہر 3 ماہ بعد بدلنا چاہیے۔ سلوشن کی بوتل کی اوپری سطح کو کسی چیز سے چھونے نہ دیں کیونکہ اس سے سلوشن آلودہ ہوسکتا ہے۔ کسی بھی سلوشن کا استعمال اُس وقت ترک کردیں جب اس کی بوتل پر درج مدت استعمال کی تاریخ گزر جائے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں