درد کا انوکھا علاج
pain treatment injection dangerous

درد سے چھٹکارا پانے کے لیے مادہ منویہ کے انجکشن کی ضرورت کیوں پیش آئی؟

خدا کے واسطے یہ تجربہ خود کرنے کی کوشش نہ کیجیے گا! انٹرنیٹ پر چند حلقوں میں مادہ منویہ (یعنی انسانی سپرم) کے افزائش نسل کے علاوہ مختلف فوائد پر بحث سامنے آتی رہتی ہے اور لوگ اکثر کسی ماہر سے رائے لیے بغیر ایسی تراکیب کا استعمال کر لیتے ہیں۔ لیکن حال ہی میں آئرلینڈ کے ڈاکٹروں کے سامنے ایک ایسا معاملہ آیا جیسا انھوں نے نہ پہلے کبھی سنا نہ دیکھا! آئرش میڈیکل جرنل نامی رسالے میں شائع ایک رپورٹ میں آئرلینڈ کے ایڈیلیڈ اینڈ میتھ ہسپتال کی ڈاکٹر لیزا ڈن نے بتایا کہ ان کے پاس ایک ایسا مریض آیا جسے کمر کے نچلے حصے میں شدید درد کی شکایت تھی۔ مریض نے بتایا کہ اسے کئی ہفتوں سے یہ شکایت ہے، جو کہ بھاری وزن اٹھانے کے بعد بڑھ گئی۔ مریض کے معائنے کے دوران ڈاکٹر نے مریض کی دائیں بازو پر ابھار دیکھا۔ وجہ پوچھنے پر مریض نے بتایا کہ گزشتہ اٹھارہ ماہ سے وہ ہر مہینے اپنے ہی مادہ منویہ کا انجیکشن خود کو لگاتا رہا ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اکثر لوگ گیسولین، پارہ، کویلہ یا ایسڈ جیسی چیزوں کے انجیکشن خودکشی کے لیے لگاتے ہیں، لیکن وہ اس بات پر حیران تھے کہ یہ شخص مادہ منویہ کا انجکشن لگا کر کیا حاصل کرنے کی کوشش کر رہا تھا۔ رپورٹس کے مطابق یہ خون کی رگوں میں مادہ منویہ کا انجیکشن لگانے کا پہلا واقعہ تھا۔ ڈاکٹرز کہتے ہیں کہ اس معاملے سے یہ سبق حاصل کیا جا سکتا ہے کہ بغیر جانے بوجھے کسی بھی چیز کا انجیکشن لگانا جسم کو کیسے نقصان پہنچا سکتا ہے۔ مریض کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی ہے۔ ہسپتال میں چند روز علاج کے بعد جب وہ شخص بہتر محسوس کرنے لگا تو اسے گھر بھیج دیا گیا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں