مینتھول جیل سے سردرد کا علاج
manthool jell headache treatment

 امریکی یونیورسٹی نے تحقیق کے بعد انکشاف کیا ہے کہ شدید سر درد یا میگرین کی صورت میں پودینے کا جیل لگانے سے تکلیف کم یا ختم ہو سکتی ہے۔

فاکس نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق پودینے (مینتھول) کے جیل کے استعمال اور اس کے اثرات کا مشاہدہ امریکی شہریوں پر کیا گیا۔رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ سر درد یا میگرین کے دورے کے دوران جیل گردن کے پچھلے حصے پر لگانے سے درد کم کرنے میں بہت حد تک مدد ملتی ہے۔تھامس جیفرسن یونیورسٹی کی ایک تحقیق کے مطابق آدھے سر کے درد کے لیے مینتھول جیل انتہائی موثر ثابت ہوتا ہے اور اس کو سر کا درد کم کرنے میں مؤثر پاہا گیا ہے۔یونیورسٹی کی تحقیق کے بعد ایک جیل متعارف بھی کروایا گیا جس کو 'اسٹاپ پین' (Stopain) کا نام دیا گیا ہے۔امریکا میں اس جیل کی قیمت 14.99 ڈالر (1600 پاکستانی روپے) مقرر کی گئی ہے۔

وال اسٹریٹ جنرل کی رپورٹ کے مطابق ڈائریکٹر مشی گن انسٹیٹیوٹ آف ہیڈایک اینڈ نیورولوجی کے جویل اسپر کا تحقیق کے حوالے سے کہنا تھا کہ مینتھول جیل اگرچہ میگرین کا مکمل علاج نہیں ہے، تاہم بہت سے لوگوں کو اس سے فائدہ ہوا ہے۔امریکا کی نیشنل لائبریری آف میڈیسن کے ماتحت انسٹیٹوٹ آف ہیلتھ کے سینٹر آف بائیوٹیکنالوجی انفارمیشن کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس جیل کا تجربہ ایک سال تک 25 مریضوں پر کیا گیا۔رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ اس حوالے سے 32 افراد کو رجسٹرڈ کیا گیا جن میں سے 25 مریضوں نے ایک سال تک اس تحقیق میں جیل کا استعمال کیا۔ان افراد میں سے 7 افراد کا درد مکمل طور پر ختم ہوا جبکہ 13 کے درد میں کمی آئی البتہ 5افراد کو کسی قسم کا افاقہ نہیں ہو سکا۔تھامس جیفرسن یونیورسٹی کی اس تحقیق میں مزید کہا گیا ہے کہ مشاہدے سے ثابت ہوتا ہے کہ مینتھول جیل سر درد یا میگرین میں افاقہ لانے کے لیے بہتر ہے۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں