خودکشی کا خیال آئے تو کیا کرنا چاہیے؟
  • 0
  • 0

http://tuition.com.pk
disappointment suicide

ہر انسان کی زندگی میں مختلف اوقات میں اونچ نیچ، خوشی و غمی آتی ہی ہے۔ ہر وقت ایک جیسا نہیں ہوتا۔ کوئی انسان رشتوں میں دراڑ آنے پر افسردہ ہوتا ہے تو کوئی کیرئیر کے حوالے سے فکر مند ہوتا ہے۔

غرض زندگی میں بہت سارے ایسے مواقع آتے ہیں جب انسان کو مایوسی کے گہرے بادل گھیر لیتے ہیں۔ لیکن مشکل صورتِ حال میں ہر انسان کی کیفیت بالکل مختلف ہوتی ہے۔ کوئی مشکلات سے لڑائی کا فیصلہ کرتا ہے تو کوئی بالکل مایوس ہوکر خودکشی کا خیال ذہن میں لے آتا ہے، جو انتہائی خطرناک عمل ہے۔ ایسے لوگوں سے عام طور پر تو یہی درخواست کی جاتی ہے کہ مشکل صورتِ حال کا مقابلہ کرنا سیکھیں اور اپنے دکھوں کو کم کرنے کے لیے اہل خانہ، قریبی دوست یا رشتہ داروں سے تفصیلی گفتگو کریں۔ ایسا کرنے سے یقیناً کوئی حل ضرور نکل جائے گا۔ مگر ہم آپ کو اس کے علاوہ کچھ نکات پیش کررہے ہیں جن پر عمل کرکے خودکشی جیسے منفی خیالات سے خود کو بچایا جاسکتا ہے، تو آئیے اُن نکات پر بات کرتے ہیں۔ نااُمید ہرگز مت ہوں چاہے آپ کی زندگی میں کتنی ہی بڑی مصیبت کیوں نہ آجائے، آپ کو ہر حال میں پُرامید رہنا ہوگا کہ یہی ایک واحد راستہ ہے جس پر چلتے ہوئے آپ دنیا کا مقابلہ کرسکتے ہیں۔ خود کو وقت دیجیے تاکہ مصیبت سے نکلا جاسکے، اور یقین کریں جب آپ پُرامید رہیں گے تو وقت کے ساتھ ساتھ مشکلات سکون و راحت میں تبدیل ہوجائیں گی۔ جلد بازی کے فیصلوں سے بچیں آپ کسی بھی مشکل صورتِ حال میں تنہا ہیں اور خیال کررہے ہیں کہ خود کو مار کے ہی آپ کے مسائل حل ہوں گے تو آپ بالکل غلط ہیں۔ ایسے موقعوں پر جلد بازی سے پرہیز کریں۔ اگر ممکن ہو تو کسی سے مل لیں۔ کسی پُرفضا مقام کا رخ کرلیں۔ ایسا کرنے کی صورت میں آپ بہت بہتری محسوس کریں گے اور مشکلات سے لڑنے کی ہمت بھی مل جائے گی۔ لوگوں سے بات کریں آپ کسی بھی مشکل سے پریشان ہیں تو آپ کے لیے بہت ضروری ہے کہ لوگوں سے خصوصاً اہلخانہ اور دوستوں سے ذکر کریں، آپ اپنے کسی ایسے دوست سے بھی اپنا مسئلہ شیئر کرسکتے ہیں جس سے متعلق آپ کا خیال ہو کہ وہ سنجیدگی کے ساتھ مسئلے کو سن سکتا ہے۔ کیونکہ یہ وہ لوگ ہیں جو مشکل صورتحال سے نکلنے کے لیے بہترین حل تجویز کرسکتے ہیں۔آس پاس لوگوں پر غور کریں اگر آپ مشکل صورتحال میں خود کو تنہا محسوس کررہے ہیں اور سمجھ نہ آرہا ہو کہ اِن حالات سے کیسے نکلا جائے تو اپنے ارد گرد ایسے لوگوں پر غور کریں جو نجانے کتنے عرصے سے پریشانی کا بہادری سے مقابلہ کررہے ہیں، ایسے لوگوں کو دیکھ کر آپ کی نہ صرف ہمت بڑھے گی بلکہ یہ سمجھ بھی آئے گا کہ کس طرح مشکلات کا سامنا کرنا ہے۔ خودکشی سے کبھی مسائل حل نہیں ہوتے اگر آپ مشکل حالات کا مقابلہ کرتے کرتے تھک گئے ہیں اور اب سوچ رہے ہیں خودکشی کے علاوہ آپ کے پاس کوئی حل نہیں تو یاد رکھیں کہ خودکشی کرنے کے بعد بھی مسائل حل نہیں ہوں گے۔ کیونکہ شاید آپ کو تو نجات مل جائے لیکن آپ کے چاہنے والے یعنی اہلخانہ اور دوست آپ کی اِس حرکت کی وجہ سے مزید پریشان ہوجائیں گے۔ تو کیا آپ یہ چاہتے ہیں کہ وہ بھی یہ راستہ اختیار کریں تاکہ لوگ اِسی طرح پریشان ہوتے رہیں؟ پریشانی کبھی مستقل نہیں ہوتی اگر آپ پر کوئی مصیبت کا مشکل حالات آگئے ہیں تو یاد رکھیں کہ یہ مستقل ڈیرہ ڈالنے نہیں آئے بلکہ دیر سویر یہ مسئلہ حل ہو ہی جائے گا، لیکن اگر آپ نے خدانخواستہ خودکشی کرلی تو یہ دکھ اہل خانہ اور دیگر چاہنے والوں کو پوری زندگی کا دکھ دے جائے گا، اس لیے بہتر یہی ہے کہ کمزور پڑنے کے بجائے بہادری سے مسائل کا مقابلہ کریں کہ ایسا کرنے سے جلد سکون میسر آئے گا۔

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں