پاکستانیوں کیلئے تشویشناک خبر آگئی، یکدم تیل کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کیونکہ۔۔
worrisome news oil prices

ڈیڑھ سال سے زائد عرصے سے مسلسل گرتی ہوئی تیل کی قیمتوں میں اچانک تیزی سے اضافہ ہونا شروع ہو گیا ہے اور اس اضافے کی وجہ کینیڈا کے تیل پیداکرنے والے علاقے میں لگنے والی جنگل کی آگ ہے۔

یو ایس ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق جنگل میں لگنے والی یہ آگ بڑے علاقے پر پھیل چکی ہے اور اس کی لپیٹ میں آنے والا 88ہزار نفوس پر مشتمل ایک بڑا قصبہ ”فورٹ مک مرے“ (Fort McMurry)بھی خالی کرا لیا گیا ہے۔کینیڈا کے اس تیل پیدا کرنے والے علاقے میں آگ لگنے سے تیل کی قیمت میں تیزی کے ساتھ اضافہ ہونا شروع ہو گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق امریکی منڈی میں تیل کی قیمت میں 2.8فیصد اضافہ ہوا ہے جہاں تیل کی قیمت 45.02ڈالر(4711.57 روپے)فی بیرل سے بڑھ کر 46.07 ڈالر (4821.46روپے) ہو گئی ہے۔ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمت میں 2.6فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔
 سرمایہ کار تمام ایسے اشاروں پر نظر رکھتے ہیں جو تیل کی پیداوار میں کمی لا سکتا ہو، کیونکہ اس سے روایتی طور پر تیل کی قیمت بھی متاثر ہوتی ہے۔یو ایس ٹوڈے کے مطابق فورٹ مک مرے کے علاقے میں لگنے والی اس آگ سے اب تک 1600کے لگ بھگ عمارات تباہ ہو چکی ہیں۔ یہ قصبہ البرٹا آئل سینڈ کے وسط میں واقع ہے۔ اس علاقے میں سعودی عرب اور وینزویلا کے بعد دنیا کے تیسرے بڑے تیل کے ذخائر موجود ہیں۔رپورٹ کے مطابق تیل کی قیمتوں میں حالیہ تیزی کی لہر کی ایک بڑی وجہ لیبیا میں بڑھتی کشیدگی کو بھی قرار دیا جا رہا ہے۔ عالمی خبررساں ایجنسی رائٹرز نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ لیبیا کی تیل کی جو پہلے ہی کم ہو چکی ہے اس کشیدگی کے بعد مزید کم ہونے کا امکان ہے

تازہ ترین

اپنا تبصرہ چھوڑیں